مادروطن اورہم وطنوں کی حفاظت کرتے ہوئے دشمن کومارنایا اس کے ہاتھوں مرنا ''ملازمت'' نہیں ہوسکتی،بلاشبہ یہ ایک'' مقدس مشن'' ہے۔پاکستان اورپاکستانیوں کے وردی پوش محافظ اپنی شناخت ظاہرکئے بغیر ہرشرکامقابلہ کرنیوالے آئی ایس آئی کے پراسرارکردار ہمارے'' خادم یاملازم'' نہیں''محبوب اور محسن'' ہیں۔پاکستان کے ساتھ ان نڈرمحافظوں کا'' تنخواہ'' نہیں ''وفا''کارشتہ ہے،ہمارے باوفااورباصفامحافظ راہ حق پرگامزن ہیں۔ پاک فوج کے سرفروش جانبازہوںیاپولیس کے فرض شناس جوان یہ ہمارے اپنے ہیں،کسی اہلکارکامتنازعہ انفرادی فعل قابل نفرت یاقابل گرفت ہوسکتا ہے لیکن ان اداروںکی مجموعی کارکردگی انتہائی شانداراورقابل رشک ہے ۔ فوج اورپولیس کی وردی کے رنگ مختلف ہیں مگرہمارے سرفروش جوانوں کے جوش سے ابلتے خون کارنگ سرخ جبکہ دونوں کے ہاتھوں میں سبزہلالی پرچم ہے۔ان کیلئے پاکستان محض وطن نہیں بلکہ ایک جنون اوران کی جنت ہے۔یہ شوق شہادت سے سرشار اورشیرخداحضرت علی ؓ کی تلوارہیں۔ پاکستان سے عشق ان کی رگ رگ میں خون بن کردوڑتا ہے ۔سکیورٹی فورسزمیں لوگ'' اعزازیہ'' کیلئے نہیں آتے بلکہ وردی میں اپنے خون سے دہشت گردی کے شعلے بجھانااورچراغ جلانا ان کا''اعزاز''اور''اعجاز'' ہے،یہ اعزازہرگزاعزازیہ کامحتاج نہیں ہوسکتا۔ مادروطن پاکستان کادفاع کرتے ہوئے دشمن کودھول چٹانااور میدان جنگ میں جوانمردی سے جام شہادت نوش کرنا ایک بیش قیمت سعادت اورعبادت ہے
قائد تحریک صوبہ پوٹھوہار راجہ اعجاز اور ترجمان وچیف آرگنائزرارشد سلہری کا خصوصی انٹرویو نیاصوبہ پوٹھوہار کی تحریک کے متعلق انہوں نےلائیو انٹرویو میں کیا کہا مکمل انٹرویو سُننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔
ڈنمارک ادارہ آپکی آواز۔۔۔۔پاک نیوز یو کے کے ملک عمران شریف نے کبیر شاہ صاحب کو لائیو انٹرویودیتے ہوئے پاکستان کی موجودہ سیاسی صورتِ حال پر انہوں نے کیا کہا سننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔

 

ڈنمارک۔۔۔آپکی آواز۔۔۔ نوجوان سیاست دان آنے والے پارلیمنٹ کے ٹکٹ ہولڈر سابقہ سٹی کونسلر ملک سکندر صدیق نے ادارہ آپکی آوازپر لائیو انٹرویو دیتے ہوئے کیا کہا سُننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔
صراط مستقیم یعنی راہ راست کانام سیاست نہیں ، کیونکہ '' پلٹنا جھپٹنا اورجھپٹ کرپلٹنا '' میدان سیاست کی مہارت اور بنیادی ضرورت ہے۔شعبہ سیاست میںچارقدم اگربڑھنے کیلئے کبھی دوقدم پیچھے بھی ہٹنا پڑتا ہے۔سیاست سانپ اورسیڑھی کے کھیل کی مانند ہے جولوگ یہ کھیلتے رہے ہیں انہیں بخوبی اندازہ ہوگا۔میں عینی شاہدہوں کئی سیاستدانوں نے دوچاربار زیروسے سٹارٹ لیااورپھرکامیابی کی سیڑھی چڑھتے چلے گئے پھرانہیں روکنا محال ہوگیا جبکہ کچھ بلندی سے انتہائی پستی میں جاگرے اورپھرمقدرنے انہیں دوبارہ سنبھلنے اورکوئی چال چلنے کی مہلت نہیں دی۔زندگی کے دوسرے شعبوں کی طرح سیاست میں بھی سب کچھ انسان کی مرضی کے مطابق نہیں ہوتا

صراط مستقیم یعنی راہ راست کانام سیاست نہیں ، کیونکہ ” پلٹنا جھپٹنا اورجھپٹ کرپلٹنا ” میدان سیاست کی مہارت اور بنیادی ضرورت ہے۔شعبہ سیاست میںچارقدم اگربڑھنے کیلئے کبھی دوقدم پیچھے بھی ہٹنا پڑتا ہے۔سیاست سانپ اورسیڑھی کے کھیل کی…

LISTEN SHAKIR QURESHI LIVE INTERVIEWشاکر قریشی کا لائیو انٹرویو ادارہ آپ کی آواز پر لیا گیا سُننے کیلئے آپ فوٹو پر کلک کریں انہوں نے کیا کہا۔
ناروے۔ عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں بھارتی دہشتگردی وبربریت کو روکنے کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالے۔ مشال حسین ملک  اوسلو۔۔آپکی آواز۔(عامر بٹ +عقیل قادر) کشمیری حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال حسین ملک نے دورہ ناروے کے دوران دی اوسلو سینٹر کی دعوت پر لٹریچر ہاؤس اوسلو میں مسئلہ کشمیر اور اسکا حل کے موضوع پر خطاب کیا جس میں نارویجن ،کشمیری، پاکستانی، انڈین اور افریقین کمیونٹی کے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ تقریب کے آرگنائزر ناروے کے سابق وزیراعظم شیل مانگنے بُوندے وِک تھے اور انہوں نے سیمینار میں نقابت کے فرائض بھی سر انجام دیئے۔ سیمینار سے مشال حسین ملک نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں روزانہ لوگوں کو قتل کیا جاتا ہے ، خواتین اور بچوں سے جنسی زیادتی کے واقعات عام ہو چکے ہیں اور ہزاروں افراد تشدد کی وجہ سے اپاہج ہو چکے ہیں۔ انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر ایک دیرینہ مسئلہ ہے جس کا حل نکالنا عالمی طاقتوں کی ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ مسئلہ کشمیر کے لیے کشمیری 70 سالوں سے قربانیاں دے رہے ہیں اور یہ قربانیاں تب تک نہیں رکیں گی جب تک مسئلہ کشمیر کا منصفانہ حل نہیں نکالا جاتا۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ پاکستان اور انڈیا کے درمیان ایسے مذاکرات کی حمایت نہیں کی جائے گی جن میں کشمیریوں کو شامل نہیں کیا جائے گا۔ شیل مانگنے بُوندے وِک اور سویڈن یونیورسٹی کے پروفیسر ستین ودملم نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے زور دیا۔ سیمینار کے آخر پر شرکاء کی طرف سے کیے گئے سوالات کے جوابات بھی دئیے گئے۔