ڈنمارک۔۔۔آپکی آواز۔۔۔ نوجوان سیاست دان آنے والے پارلیمنٹ کے ٹکٹ ہولڈر سابقہ سٹی کونسلر ملک سکندر صدیق نے ادارہ آپکی آوازپر لائیو انٹرویو دیتے ہوئے کیا کہا سُننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔

ڈنمارک۔۔۔آپکی آواز۔۔۔ نوجوان سیاست دان آنے والے پارلیمنٹ کے ٹکٹ ہولڈر سابقہ سٹی کونسلر ملک سکندر صدیق نے ادارہ آپکی آوازپر لائیو انٹرویو دیتے ہوئے کیا کہا سُننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔

صراط مستقیم یعنی راہ راست کانام سیاست نہیں ، کیونکہ '' پلٹنا جھپٹنا اورجھپٹ کرپلٹنا '' میدان سیاست کی مہارت اور بنیادی ضرورت ہے۔شعبہ سیاست میںچارقدم اگربڑھنے کیلئے کبھی دوقدم پیچھے بھی ہٹنا پڑتا ہے۔سیاست سانپ اورسیڑھی کے کھیل کی مانند ہے جولوگ یہ کھیلتے رہے ہیں انہیں بخوبی اندازہ ہوگا۔میں عینی شاہدہوں کئی سیاستدانوں نے دوچاربار زیروسے سٹارٹ لیااورپھرکامیابی کی سیڑھی چڑھتے چلے گئے پھرانہیں روکنا محال ہوگیا جبکہ کچھ بلندی سے انتہائی پستی میں جاگرے اورپھرمقدرنے انہیں دوبارہ سنبھلنے اورکوئی چال چلنے کی مہلت نہیں دی۔زندگی کے دوسرے شعبوں کی طرح سیاست میں بھی سب کچھ انسان کی مرضی کے مطابق نہیں ہوتا

صراط مستقیم یعنی راہ راست کانام سیاست نہیں ، کیونکہ ” پلٹنا جھپٹنا اورجھپٹ کرپلٹنا ” میدان سیاست کی مہارت اور بنیادی ضرورت ہے۔شعبہ سیاست میںچارقدم اگربڑھنے کیلئے کبھی دوقدم پیچھے بھی ہٹنا پڑتا ہے۔سیاست سانپ اورسیڑھی کے کھیل کی مانند ہے جولوگ یہ کھیلتے رہے ہیں انہیں بخوبی اندازہ ہوگا۔میں عینی شاہدہوں کئی سیاستدانوں نے دوچاربار زیروسے سٹارٹ لیااورپھرکامیابی کی سیڑھی چڑھتے چلے گئے پھرانہیں روکنا محال ہوگیا جبکہ کچھ بلندی سے انتہائی پستی میں جاگرے اورپھرمقدرنے انہیں دوبارہ سنبھلنے اورکوئی چال چلنے کی مہلت نہیں دی۔زندگی کے دوسرے شعبوں کی طرح سیاست میں بھی سب کچھ انسان کی مرضی کے مطابق نہیں ہوتا

صراط مستقیم یعنی راہ راست کانام سیاست نہیں ، کیونکہ ” پلٹنا جھپٹنا اورجھپٹ کرپلٹنا ” میدان سیاست کی مہارت اور بنیادی ضرورت ہے۔شعبہ سیاست میںچارقدم اگربڑھنے کیلئے کبھی دوقدم پیچھے بھی ہٹنا پڑتا ہے۔سیاست سانپ اورسیڑھی کے کھیل کی…

LISTEN SHAKIR QURESHI LIVE INTERVIEWشاکر قریشی کا لائیو انٹرویو ادارہ آپ کی آواز پر لیا گیا سُننے کیلئے آپ فوٹو پر کلک کریں انہوں نے کیا کہا۔

LISTEN SHAKIR QURESHI LIVE INTERVIEWشاکر قریشی کا لائیو انٹرویو ادارہ آپ کی آواز پر لیا گیا سُننے کیلئے آپ فوٹو پر کلک کریں انہوں نے کیا کہا۔

ناروے۔ عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں بھارتی دہشتگردی وبربریت کو روکنے کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالے۔ مشال حسین ملک  اوسلو۔۔آپکی آواز۔(عامر بٹ +عقیل قادر) کشمیری حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال حسین ملک نے دورہ ناروے کے دوران دی اوسلو سینٹر کی دعوت پر لٹریچر ہاؤس اوسلو میں مسئلہ کشمیر اور اسکا حل کے موضوع پر خطاب کیا جس میں نارویجن ،کشمیری، پاکستانی، انڈین اور افریقین کمیونٹی کے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ تقریب کے آرگنائزر ناروے کے سابق وزیراعظم شیل مانگنے بُوندے وِک تھے اور انہوں نے سیمینار میں نقابت کے فرائض بھی سر انجام دیئے۔ سیمینار سے مشال حسین ملک نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں روزانہ لوگوں کو قتل کیا جاتا ہے ، خواتین اور بچوں سے جنسی زیادتی کے واقعات عام ہو چکے ہیں اور ہزاروں افراد تشدد کی وجہ سے اپاہج ہو چکے ہیں۔ انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر ایک دیرینہ مسئلہ ہے جس کا حل نکالنا عالمی طاقتوں کی ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ مسئلہ کشمیر کے لیے کشمیری 70 سالوں سے قربانیاں دے رہے ہیں اور یہ قربانیاں تب تک نہیں رکیں گی جب تک مسئلہ کشمیر کا منصفانہ حل نہیں نکالا جاتا۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ پاکستان اور انڈیا کے درمیان ایسے مذاکرات کی حمایت نہیں کی جائے گی جن میں کشمیریوں کو شامل نہیں کیا جائے گا۔ شیل مانگنے بُوندے وِک اور سویڈن یونیورسٹی کے پروفیسر ستین ودملم نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے زور دیا۔ سیمینار کے آخر پر شرکاء کی طرف سے کیے گئے سوالات کے جوابات بھی دئیے گئے۔

ناروے۔ عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں بھارتی دہشتگردی وبربریت کو روکنے کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالے۔ مشال حسین ملک  اوسلو۔۔آپکی آواز۔(عامر بٹ +عقیل قادر) کشمیری حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال حسین ملک نے دورہ ناروے کے دوران دی اوسلو سینٹر کی دعوت پر لٹریچر ہاؤس اوسلو میں مسئلہ کشمیر اور اسکا حل کے موضوع پر خطاب کیا جس میں نارویجن ،کشمیری، پاکستانی، انڈین اور افریقین کمیونٹی کے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ تقریب کے آرگنائزر ناروے کے سابق وزیراعظم شیل مانگنے بُوندے وِک تھے اور انہوں نے سیمینار میں نقابت کے فرائض بھی سر انجام دیئے۔ سیمینار سے مشال حسین ملک نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں روزانہ لوگوں کو قتل کیا جاتا ہے ، خواتین اور بچوں سے جنسی زیادتی کے واقعات عام ہو چکے ہیں اور ہزاروں افراد تشدد کی وجہ سے اپاہج ہو چکے ہیں۔ انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر ایک دیرینہ مسئلہ ہے جس کا حل نکالنا عالمی طاقتوں کی ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ مسئلہ کشمیر کے لیے کشمیری 70 سالوں سے قربانیاں دے رہے ہیں اور یہ قربانیاں تب تک نہیں رکیں گی جب تک مسئلہ کشمیر کا منصفانہ حل نہیں نکالا جاتا۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ پاکستان اور انڈیا کے درمیان ایسے مذاکرات کی حمایت نہیں کی جائے گی جن میں کشمیریوں کو شامل نہیں کیا جائے گا۔ شیل مانگنے بُوندے وِک اور سویڈن یونیورسٹی کے پروفیسر ستین ودملم نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے زور دیا۔ سیمینار کے آخر پر شرکاء کی طرف سے کیے گئے سوالات کے جوابات بھی دئیے گئے۔

ناروے ۔ منہاج القرآن برطانیہ کے رہنما علامہ صادق قریشی کے ہاتھ پر نارویجن خاتون کا قبول اسلام

ناروے ۔ منہاج القرآن برطانیہ کے رہنما علامہ صادق قریشی کے ہاتھ پر نارویجن خاتون کا قبول اسلام

نیکی کسی کی میراث نہیں ہے طارق محمود مرزا ۔سڈنی ، آسٹریلیا

نیکی کسی کی میراث نہیں ہے طارق محمود مرزا ۔سڈنی ، آسٹریلیا

میں اور میری اہلیہ ۳۱۰۲میں آسٹریلیا سے فریضہِ حج ادا کرنے کے لئے گئے۔ اس غرض سے ہمیں پاسپورٹ، تصاویر، حفاظتی ٹیکے لگوانے کا میڈیکل سرٹیفیکیٹ، نکاح نامے کی تصدیق اور کسی امام مسجد سے مسلمان ہونے کا سرٹیفیکیٹ حاصل…

ڈنمارک ریڈیو سے "آپ کی آواز" پروگرام میں بلآخر میری بات ہو ہی گئی . بہت بہت شکریہ راجہ غفور صاحب . جو کہ اس پروگرام کے اینکر بھی ہیں . کئی ہفتوں سے آپ مجھے سے رابطہ کرنا چاہ رہے تھے . لیکن میری مصروفیات کے سبب آپ سے بات نہیں ہو پا ریی تھی . جس کا مجھے بھی افسوس تھا . میں چونکہ خود سے رابطے کر کے منتیں کر کے کہیں بھی ریڈیو اور ٹی وی پر اپنے انٹرویوز کروانے کے شوق نہیں رکھتی . اس لیئے اپنے کاموں پر ہی توجہ مرکوز رکھتی ہوں . . لیکن آپکا اصرار اور خلوص دیکھ کر مجھے بھی آپ کے پروگرام میں بات کرنا مناسب لگا . آپ نے مجھے کھل کر اظہار خیال کا موقع دیا . جس کے لیئے میں آپ کی تہہ دل سے ممنون ہوں . سٹوڈیو میں آپ کیساتھ موجود سیاسی اور سماجی شخصیت بہت پیاری اور جرات مند خاتون لبنی الہی صاحبہ بھی موجود تھیں ان سے بات کر کے بھی دلی مسرت ہوئی . 2015 میں صدف مرزا صاحبہ کی تنظیم کی جانب سے خواتین کے ووٹنگ رائٹس کی صد سالہ تقریبات کے حوالے سے ایک کانفرنس میں شرکت کرنے کا موقع ملا تھا تو وہیں لبنی الہی صاحبہ سے بھی ایک خوبصورت ملاقات ہوئی تھی . ان کے کام.انکی پہچان ہیں ماشاءاللہ . ڈنمارک کوپن ہیگن اور صدف مرزا صاحبہ (جو.ہماری بیحد پیاری دوست ہیں ) ایک ساتھ اپنی پہچان رکھتے ہیں . ان کے بعد آج مدت بعد کے بعد آپ سے بات ہوئی تو بہت اچھا لگا ا . . تارکین وطن کی رہنمائی اور اصلاح کے حوالے سے آپ کے ریڈیو کی کوششیں.قابل قدر ہیں . آپ اور آ پکے سامعین سلامت رہیں ۔ممتاز ملک کا مکمل انٹر ویو سُننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔

ڈنمارک ریڈیو سے “آپ کی آواز” پروگرام میں بلآخر میری بات ہو ہی گئی . بہت بہت شکریہ راجہ غفور صاحب . جو کہ اس پروگرام کے اینکر بھی ہیں . کئی ہفتوں سے آپ مجھے سے رابطہ کرنا چاہ رہے تھے . لیکن میری مصروفیات کے سبب آپ سے بات نہیں ہو پا ریی تھی . جس کا مجھے بھی افسوس تھا . میں چونکہ خود سے رابطے کر کے منتیں کر کے کہیں بھی ریڈیو اور ٹی وی پر اپنے انٹرویوز کروانے کے شوق نہیں رکھتی . اس لیئے اپنے کاموں پر ہی توجہ مرکوز رکھتی ہوں . . لیکن آپکا اصرار اور خلوص دیکھ کر مجھے بھی آپ کے پروگرام میں بات کرنا مناسب لگا . آپ نے مجھے کھل کر اظہار خیال کا موقع دیا . جس کے لیئے میں آپ کی تہہ دل سے ممنون ہوں . سٹوڈیو میں آپ کیساتھ موجود سیاسی اور سماجی شخصیت بہت پیاری اور جرات مند خاتون لبنی الہی صاحبہ بھی موجود تھیں ان سے بات کر کے بھی دلی مسرت ہوئی . 2015 میں صدف مرزا صاحبہ کی تنظیم کی جانب سے خواتین کے ووٹنگ رائٹس کی صد سالہ تقریبات کے حوالے سے ایک کانفرنس میں شرکت کرنے کا موقع ملا تھا تو وہیں لبنی الہی صاحبہ سے بھی ایک خوبصورت ملاقات ہوئی تھی . ان کے کام.انکی پہچان ہیں ماشاءاللہ . ڈنمارک کوپن ہیگن اور صدف مرزا صاحبہ (جو.ہماری بیحد پیاری دوست ہیں ) ایک ساتھ اپنی پہچان رکھتے ہیں . ان کے بعد آج مدت بعد کے بعد آپ سے بات ہوئی تو بہت اچھا لگا ا . . تارکین وطن کی رہنمائی اور اصلاح کے حوالے سے آپ کے ریڈیو کی کوششیں.قابل قدر ہیں . آپ اور آ پکے سامعین سلامت رہیں ۔ممتاز ملک کا مکمل انٹر ویو سُننے کیلئے تصویر پر کلک کریں۔